امتیازی سلوک کیا ہے؟

امتیازی سلوک روا رکھنے کے خلاف امتناع انسانی حقوق کے تحفظ کی بنیاد ہے اور غیرامتیازی برتاؤ کا اصول جمہوری اور کثرتیت والے(pluralistisk) معاشرہ کے ریڑھ کی ہڈی ہے 

امتیازی سلوک کا مطلب کیا ہے؟

امتیازی سلوک ایک غیرمنصفانہ برتاؤ کرنا ہے، جس کا نتیجہ یہ ہوتا ہے کہ ایک شخص کو اپنی جنس، نسل، رنگ، مذہب یا عقیدے، سیاسی رائے، جنسیرجحان، عمر، معذوری یا قومیتسماجی تہذیبی و ثقافتی روایات والی اصلیت کی بنیاد پر دوسروں کے مقابلے میں بدتر سلوک کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ اگر کسی سے امتیازی سلوک روا رکھا جائے تو نتیجہ کے طور پر وہ دوسروں کے ساتھ مساوی شرائط پر شرکت نہیں کر سکے گا، یا معاشرے کے تمام دوسرے افراد کی طرح اسے مواقع نہیں میسر ہوں گے مثلاً سکول میں یا کام کی جگہ پر۔

 

اگر کسی امتیازی برتاؤ کو درحقیقت/ قانون کےبیان شدہ دائرے کے تحت نہ بھی لایا جا سکے تھ پھر بھی کسی شخص کو ایسا محسوس ہوسکتا ہے کہ اس کے ساتھ امتیازی سلوک روا رکھا جا رہا ہے یا اُسے ایسے برتاؤ کا سامنا ہے۔ اس بات سے اُس تجربہ کی شدت اور سنگینی میں کمی نہیں آ جاتی مگر یہ ایک وجہ بنتی ہے کہ اس معاملے کو درحقیقت/ قانون میں بیان کردہ امتیازی برتاؤ سے ہٹ کر کسی دیگر طرح سے اٹھایا جائے۔

 

امتیازی سلوک روا رکھنے کی چار قسمیں ہیں؛ براہ راست امتیازی سلوک، بالواسطہ امتیازی سلوک، ہراساں کرنا، جنسی ہراسانی اور امتیازی سلوک کی ہدایات دینا۔ آپ IMR کی شکایات کی گائیڈ میں امتیازی سلوک کی مختلف اقسام کے بارے میں مزید پڑھ سکتے ہیں [حوالہ]

ایک واقعہ کی رجسٹری کریں